پنجاب بھر کے تعلیمی اداروں میں سگریٹ کی فروخت پر پابندی

ویب ڈیسک  جمعرات 25 اکتوبر 2018
اسکول، کالجز اور یونیورسٹیز میں سرعام سگریٹ فروخت کیے جا رہے ہیں، درخواست گزار کا موقف فوٹو: فائل

اسکول، کالجز اور یونیورسٹیز میں سرعام سگریٹ فروخت کیے جا رہے ہیں، درخواست گزار کا موقف فوٹو: فائل

 لاہور: ہائی کورٹ نے صوبے بھر کے تعلیمی اداروں میں سگریٹ کی فروخت پر پابندی لگا دی۔ 

ایکسپریس نیوز کے مطابق لاہور ہائی کورٹ کے جج جسٹس علی اکبر قریشی نے صوبے بھر کے تعلیمی اداروں میں سگریٹ کی فروخت روکنے کے لیے درخواست کی سماعت کی۔

درخواست گزار کا موقف تھا کہ اسکول، کالجز اور یونیورسٹیز میں سرعام سگریٹ فروخت کیے جا رہے ہیں، عدالت تعلیمی اداروں میں سگریٹ فروخت کرنے اور سگریٹ پینے پر پابندی عائد کرے۔

لاہور ہائی کورٹ نے موقف سننے کے بعد صوبے بھر کے تعلیمی اداروں میں سگریٹ کی فروخت پر پابندی لگا دی۔ جسٹس علی اکبر قریشی نے قرار دیا کہ اساتذہ بھی تدریسی ذمہ داریاں نبھانے کے دوران سگریٹ نوشی نہ کریں۔



ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔