مکڑی کے دماغ کو اغوا کرنے والی مافیا بِھڑ دریافت

ویب ڈیسک  ہفتہ 1 دسمبر 2018
تصویر میں نیچے بھڑ ہے اور اوپر مکڑی جس پر وہ انڈے دے رہی ہے (فوٹو: بشکریہ گیک ویب سائٹ)

تصویر میں نیچے بھڑ ہے اور اوپر مکڑی جس پر وہ انڈے دے رہی ہے (فوٹو: بشکریہ گیک ویب سائٹ)

 لندن: حشرات کی دنیا سے ایک دلچسپ خبر آئی ہے کہ ماہرین نے ایک بھڑ (شہد کی مکھی جیسا ایک کیڑا یا واسپ) دریافت کیا ہے جو نہ صرف ایک مکڑی پر پلتی ہے بلکہ اس کے دماغ کو قابو کرکے اس سے اپنی کام بھی کرواتی ہے۔

اگرچہ بھڑیں انسانوں کو کاٹنے میں مشہور ہیں لیکن سائنس دانوں نے ایمیزون کے جنگلات میں ایک ایسی بِھڑ دیکھی ہے جن کا حیاتیاتی چکر انتہائی حیران کن ہے۔ یہ بھڑ اپنے لارووں کو ایک مکڑی پر پروان چڑھاتی ہے اور اس کے بعد وہ مکڑی خود ان لارووں کا نوالہ بن جاتی ہے۔

ایکالوجیکل اینٹا مائلوجی میں شائع ایک تحقیق مضمون میں کہا گیا ہے کہ سب سے پہلے مادہ بھڑ ایک مکڑی پر انڈے دیتی ہے جو اس سےچپک جاتے ہیں۔ پھر انڈوں کے لاروا نکلتے ہی مکڑی کو کھانا شروع کردیتے ہیں لیکن بات اس سے بھی آگے جاتی ہے۔ لاروا بڑھنے کے بعد بھی مکڑی کو نہیں چھوڑتا اور اس سے مخصوص کام بھی کرواتا ہے۔

لاروا مکڑی کو مجبور کرتا ہے کہ وہ اپنے قبیلے یا کالونی کو چھوڑے اور اسے مناسب جگہ لے جاکر وہاں اس کے تار سے اپنا خول نما گھر (کوکون) بنواتا ہے۔ جب گھر بن جاتا ہے تو لاروا اس مکڑی کو کھا کر اپنے گھر چلا جاتا ہے اور اپنی زندگی کے بقیہ مراحل وہیں طے کرکے ایک جوان بھڑ کی صورت میں باہر آتا ہے!

بھڑ کی اس نئی قسم کو ’زیٹی پوٹا‘ کا نام دیا گیا ہے۔ اس پر دن رات تحقیق کرنے والی پروفیسر سمانتھا اسٹراس کہتی ہیں کہ بھڑ اپنی شکار مکڑی کے دماغ کو مکمل قابو میں کرلیتی ہے جب اس کا دماغ ماؤف ہوجاتا ہے تو وہ ایسے کام کرتی ہے جو اسے نہیں کرنے چاہئیں  مثلاً دوست مکڑیوں سے دور جانا اور ایک عجیب گھر بنانا۔

لیکن یہ سب کچھ کیسے ہوتا ہے اور لاروا مکڑی کو کیسے قابو کرتا ہے؟ اس کا جواب معلوم کرنا ابھی باقی ہے خود سائنس داں اگلے مرحلے میں اس حیرت انگیز امر پر غور کریں گے۔

شاید لاروا مکڑی کے ہارمون کو تبدیل کرکے یہ کام کرواتا ہے لیکن یہ سب عمل بہت خوف ناک اور عجیب ہے۔



ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔