درخت سے نکلتی آبشار گاؤں بھر کو سیراب کرتی ہے

ویب ڈیسک  اتوار 17 مارچ 2019
اس درخت سے 25 سال سے ٹھنڈے اور شفاف پانی کی آبشار بہہ رہی ہے۔ فوٹو : ٹویٹر

اس درخت سے 25 سال سے ٹھنڈے اور شفاف پانی کی آبشار بہہ رہی ہے۔ فوٹو : ٹویٹر

ڈینوسا: مونٹینگرو اپنی جھیلوں، تالابوں اور پہاڑوں کے لیے دنیا بھر میں شہرت رکھتا ہے لیکن اس کی شہرت کی ایک اور وجہ ایسا درخت ہے جس میں سے ٹھنڈے اور شفاف پانی کی آبشار نکلتی ہے۔

بین الاقوامی خبر رساں ادارے کے مطابق مونٹینگرو کے گاؤں ڈینوسا میں شہتوت کا ایک ایسا درخت موجود ہے جس میں سے برسات کے موسم کے بعد سے آبشار ابل پڑتی ہے۔ شہتوت کے درخت سے آبشار بہنے کا اپنی نوعیت کا منفرد عمل گزشتہ 20 یا 25 سال سے جاری ہے۔

مقامی افراد کا کہنا ہے کہ یہ درخت 100 سال پرانا ہے، جس کے تنے کے بیچوں بیچ ایک خلاء بن گیا ہے جس میں سے ٹھنڈے اور شفاف پانی کی آبشار نکلتی ہے۔  یہ نہایت خوبصورت منظر ہوتا ہے جو دل موہ لیتا ہے۔ مقامی افراد کی کثیر تعداد اس سے مستفید ہو رہی ہے۔
کہا جاتا ہے کہ برسات کے موسم میں جمع ہونے والا زیر زمین پانی درخت کی جڑوں سے ہوتا تنے میں داخل ہوتا ہے اور کسی دباؤ کی وجہ سے تنے میں موجود خلاء کے ذریعے باہر نکل آتا ہے، تاہم وجہ کوئی بھی ہو، یہ منظر دلکش اور علاقہ مکینوں کے لیے یہ آبشار کسی نعمت سے کم نہیں۔



ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔