ایف آئی اے نے حریم شاہ کے خلاف منی لانڈرنگ کی تحقیقات شروع کردیں

ویب ڈیسک  بدھ 12 جنوری 2022
حریم شاہ نے دعویٰ کیا کہ وہ بھاری رقم لے کر باآسانی پاکستان سے باہر گئیں (فوٹو اسکرین گریپ)

حریم شاہ نے دعویٰ کیا کہ وہ بھاری رقم لے کر باآسانی پاکستان سے باہر گئیں (فوٹو اسکرین گریپ)

 کراچی: وفاقی تحقیقاتی ادارے (ایف آئی اے) نے ویڈیو وائرل ہونے کے بعد حریم شاہ کے خلاف منی لانڈرنگ کی تحقیقات شروع کردیں۔

ایکسپریس نیوز کے مطابق متنازع ٹک ٹاکر کی گزشتہ روز سماجی رابطے کی ویب سائٹس پر ایک ویڈیو وائرل ہوئی جس میں وہ بھاری رقم کی منتقلی کا اعتراف کررہی تھیں۔

اب ایف آئی اے نے اس ویڈیو کا نوٹس لیتے ہوئے حریم شاہ کے خلاف منی لانڈرنگ کی تحقیقات شروع کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔

ترجمان ایف آئی اے سندھ کے مطابق حریم شاہ کا اصل نام فضا حسین ہے، جنہوں نے 10 جنوری کی رات کراچی انٹرنیشنل ایئرپورٹ سے قطر (دوحا) کیلئے سفر کیا تھا اور منی لانڈرنگ سے متعلق ایک ویڈیو بنا کر شیئر کی۔

ایف آئی اے نے حریم شاہ کے ویزے، امیگریشن اور سفری دستاویزات کی تفصیلات حاصل کر کے برطانیہ کی نیشنل کرائم ایجنسی کو خط لکھنے کا فیصلہ کیا، جس میں ٹک ٹاکر کے خلاف کارروائی کی استدعا بھی کی جائے گی۔

مزید پڑھیں: والدین کی دعاؤں کے صلے میں حریم شاہ جیسی بیوی ملی، بلال شاہ   

ترجمان ایف آئی اے نے بتایا کہ حریم شاہ کے خلاف فارن ایکسچینج قوانین کے تحت تحقیقات اور کارروائی کا آغاز کردیا جس کے سلسلے میں پاکستان کسٹمز اور ایئرپورٹ سیکیورٹی فورس سے معلومات حاصل کی گئیں۔

حکام کا کہنا ہے کہ غیر قانونی طریقے سے کرنسی کی منتقلی منی لانڈرنگ کے زمرے میں آتی ہے۔

قبل ازیں حریم شاہ کی ایک ویڈیو انٹرنیٹ پر وائرل ہوئی جس میں انہوں نے بتایا کہ وہ پہلی بار بھاری رقم لے کر لندن پہنچ گئیں ہیں اور انہیں پاکستان کے ایئرپورٹ پر کسی نے نہیں روکا اور نہ روک سکتا ہے۔ ٹک ٹاکر نے کہا کہ پاکستان میں قانون صرف غریب کے لیے ہے۔

ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔