پی اے سی نے آڈیٹر جنرل بلند اختر رانا کوطلب کرلیا

آن لائن  بدھ 28 مئ 2014
آڈیٹرجنرل کی تنخواہ کی رپورٹ کاجائزہ ،کسی کوبھی پارلیمنٹ کمیٹیوں سے استثنی نہیں،پی اے سی

آڈیٹرجنرل کی تنخواہ کی رپورٹ کاجائزہ ،کسی کوبھی پارلیمنٹ کمیٹیوں سے استثنی نہیں،پی اے سی

اسلام آباد: پبلک اکاؤنٹس کمیٹی نے اڈیٹر جنرل بلند اختر رانا کو اپنی تنخواہ میں خود اضافے کے معاملے کے وضاحت کے لئے 3جون کو طلب کرلیاہے یہ فیصلہ منگل کو پی اے سی کے ایک بند کمرے کے اجلاس میں کیاگیا۔

جس کی صدارت سید خورشید شاہ نے کی ۔اجلاس میں شریک ذرائع نے بتایاکہ اجلاس میں آڈیٹرجنرل بلند اختررانا کی طرف سے تنخواہ اورمراعات میں اضافے کے معاملے پربنائی گئی ذیلی کمیٹی کی رپورٹ کا تفصیلی جائزہ لیاگیا۔ذیلی کمیٹی کی طرف سے بتایاگیاکہ بار بارطلبی کے باوجودبلند اختررانا کمیٹی میں نہیں آئے۔

جس کے باعث کمیٹی کواپنی رپورٹ پی اے سی کودینی پڑی ۔ذیلی کمیٹی کی رپورٹ میں یہ بھی بتایاگیاکہ اس امرکے شواہدملے ہیں کہ آڈیٹرجنرل نے خوداپنی تنخواہ میں اضافہ کیاجبکہ انہیں اس قسم کے اختیارات نہیں تھے انہوں نے مراعات بھی اپنے عہدے کے تقاضوں سے زیادہ حاصل تھیں۔کمیٹی نے اتفاق کیا کہ کسی کو بھی پارلیمنٹ کی کمیٹیوں سے استثنی حاصل نہیں بلند اخترراناتین جون کو کمیٹی کے اجلاس میں پیش ہوں۔اے پی پی کے مطابق پی اے سی کااجلاس (آج) بدھ کوپارلیمنٹ ہاؤس میں ہوگا۔ اجلاس میں وفاقی وزارتوں اورڈویژن کے حسابات پرآڈٹ اعتراضات کاجائزہ لیاجائیگا۔

 

ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔