ن لیگ ایم کیو ایم ملاقات، متحدہ نے حکومت سازی کے عوض مطالبات پیش کردیے

ویب ڈیسک  اتوار 11 فروری 2024
ملاقات میں شہباز شریف اور مریم نواز شریف نے بھی شرکت کی

ملاقات میں شہباز شریف اور مریم نواز شریف نے بھی شرکت کی

رائیونڈ: ایم کیو ایم کے وفد نے مسلم لیگ (ن) کے قائد محمد نواز شریف سے ملاقات کی جس میں حکومت سازی پر بات چیت کی گئی، ایم کیو ایم نے حکومت سازی میں شمولیت کے عوض اپنے مطالبات پیش کردیے۔

ایکسپریس نیوز کے مطابق ‏متحدہ قومی موومنٹ (ایم کیو ایم) پاکستان کا وفد رائیونڈ پہنچا۔ ڈاکٹر خالد مقبول صدیقی کی سربراہی میں ایم کیو ایم قائدین وفد نے پاکستان مسلم لیگ (ن) کے قائد محمد نواز شریف سے ملاقات کی۔ سابق وزیراعظم اور پاکستان مسلم لیگ (ن) کے صدر شہباز شریف اور چیف آرگنائزر مریم نواز شریف اور جماعت کے دیگر رہنما بھی اس موقع پر موجود تھے۔

سیاسی بیٹھک میں نئی حکومت سازی ، آئندہ سیاسی حکمت عملی سمیت دیگر اہم امور پر مشاورت ہوئی۔

ملاقات کی اندرونی کہانی

 

بعدازاں مسلم لیگ ن اور متحدہ قومی موومنٹ کے درمیان ملاقات کی اندرونی کہانی سامنے آگئی۔ ایم کیو ایم نے ن لیگ سے تعاون کے عوض مطالبات پیش کردیے۔

ذرائع کے مطابق ایم کیو ایم نے مطالبات کی فہرست نواز شریف کے سامنے رکھ دی اور ن لیگ کی حکومت بننے کی صورت میں سندھ کی گورنر شپ مانگ لی جبکہ کراچی میں وفاق کے ترقیاتی منصوبوں میں آن بورڈ رکھنے کا مطالبہ بھی کیا۔

نوازشریف نے ایم کیو ایم کی شرائط کا مثبت انداز میں جواب دیا اور ایم کیو ایم و پیپلزپارٹی کے درمیان مصالحانہ کردار ادا کرنے کی ہامی بھرلی۔

نوازشریف نے شہبازشریف کو ہدایت کی کہ شہبازشریف صاحب آپ کے پیپلزپارٹی اور ایم کیو ایم کے درمیان مصالحانہ کردار ادا کرنا ہے۔

دریں اثنا ملاقات کے بعد ایم کیو ایم کا وفد لاہور سے کراچی روانہ ہوگیا۔

ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔