وزیراعلیٰ سندھ نے کیڈٹ کالج کے طالبِ علم کی امریکا میں علاج کی منظوری دے دی

ویب ڈیسک  منگل 29 نومبر 2016
بچے کی صحت یابی میں 3 سے 6 ماہ لگیں گے، سیکریٹری صحت: فوٹو: فائل

بچے کی صحت یابی میں 3 سے 6 ماہ لگیں گے، سیکریٹری صحت: فوٹو: فائل

 کراچی: وزیراعلیٰ سندھ مراد علی شاہ نے کیڈٹ کالج لاڑکانہ کے طالبِ علم احمد کے امریکا میں علاج کی منظوری دے دی ہے۔

ایکسپریس نیوز کے مطابق میڈیکل بورڈ نے لاڑکانہ کیڈٹ کالج میں تشد کا شکار بننے والے طالب علم احمد کو علاج کے لیے بیرون ملک بھیجنے کی سفارش کی تھی، جس کے بعد اب وزیراعلیٰ سندھ مراد علی شاہ نے طالبِ علم کے امریکا میں علاج کی منظوری دے دی ہے۔ وزیراعلی کی جانب سے محکمہ صحت کو بچے اوراس کے والد کے پاسپورٹ بنانے سمیت محکمہ فائنانس کوبچے کے علاج کے اخراجات کے لیے رقم جاری کرنے کی ہدایت کردی گئی ہے۔

سیکریٹری صحت ڈاکٹرعثمان چاچڑکا کہنا ہے کہ بچے کے ساتھ اس کے والد کو امریکا بھیجا جائے گا، دونوں کوائر ایمبولینس کے بجائے عام فلائیٹ سے بھیجا جائے گا، بچے کا علاج سن سنارٹی چلڈرن اسپتال اوہائیو میں ممکن ہے جہاں بچے کا علاج ماہرامراضِ اطفال ڈاکٹررابن ٹی کارٹن کریں گے جب کہ بچے کی صحت یابی میں 3 سے 6 ماہ لگیں گے۔

واضح رہے کیڈٹ کالج لاڑکانہ کے 14 سالہ طالب علم محمد احمد کو استاد نے تشدد کا نشانہ بنایا جس کے باعث طالب علم کی گردن کی ہڈی ٹوٹ گئی اور وہ ذہنی صلاحیت سے بھی محروم ہوگیا ہے۔



ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔