جاوید اختر اور شبانہ اعظمی کو ہندو انتہا پسندوں کا خوف، دورہ پاکستان منسوخ

ویب ڈیسک  جمعـء 15 فروری 2019
جاوید اخترا ور ان کی اہلیہ کو کیفی اعظمی کے اعزاز میں دی جانےو الی تقریب میں شرکت کرنا تھی فوٹوفائل

جاوید اخترا ور ان کی اہلیہ کو کیفی اعظمی کے اعزاز میں دی جانےو الی تقریب میں شرکت کرنا تھی فوٹوفائل

ممبئی: نامور بالی ووڈ شاعر اوراسکرپٹ رائٹر جاوید اختر اور ان کی اہلیہ شبانہ اعظمی نے کشمیر پلوامہ حملے کے بعد ہندوانتہا پسندوں کے خوف سے دورہ کراچی منسوخ کردیا۔

جاوید اختر اور اداکارہ شبانہ اعظمی کو 23 اور 24 فروری کو کراچی آرٹس کونسل میں شبانہ اعظمی کے والد کیفی اعظمی کے اعزاز میں منعقدہ تقریب میں شرکت کرنا تھی۔

دونوں نے تقریب میں شرکت کی تصدیق بھی کردی تھی تاہم گزشتہ روز مقبوضہ کشمیر کے ضلع پلوامہ میں ہونے والے خودکش حملے کے بعد انہوں نے اپنا دورہ کراچی منسوخ کردیا۔

اس خبرکوبھی پڑھیں: نصیرالدین شاہ کو بھارت چھوڑ کر پاکستان چلے جانا چاہئے

دورہ منسوخ کرنے کی اطلاع جاوید اختر نے ایک ٹوئٹ کے ذریعے دی، جاوید اختر نے لکھا ’’کراچی آرٹس کونسل نے مجھے اور شبانہ کو کیفی اعظمی کے اعزاز میں منعقد کی جانے والی دوروزہ تقریب میں بطور مہمان مدعو کیا تھا تاہم اب ہم نے اپنا دورہ منسوخ کردیا ہے۔‘‘

جاوید اختر کی ٹوئٹ سے صاف ظاہر ہے کہ انہوں نے اپنا دورہ کراچی پلوامہ حملے کے بعد بھارتی ہندوانتہا پسندوں کے خوف کی وجہ سے منسوخ کیاہے۔

اس خبرکوبھی پڑھیں: عامر خان، نصیرالدین شاہ اور سدھو کوغدار 

واضح رہے کہ بھارت میں مقیم مسلم فنکاروں کو اکثر ہندوانتہا پسندوں کی جانب سے تنقید کا نشانہ بنایاجاتاہے، اداکار نصیر الدین شاہ، عامر خان اور شاہ رخ خان بھی ہندوانتہا پسندوں کا نشانہ بن چکے ہیں۔

ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔