نوازشریف کوعلاج کیلئے بیرون ملک منتقل کرنے کا امکان مسترد

ویب ڈیسک  منگل 31 جولائ 2018
مریم نواز کی طرف سے والد کی تیمار داری کی کوئی درخواست نہیں کی گئی، نگران وزیرداخلہ پنجاب: فوٹو: فائل

مریم نواز کی طرف سے والد کی تیمار داری کی کوئی درخواست نہیں کی گئی، نگران وزیرداخلہ پنجاب: فوٹو: فائل

 لاہور: سابق وزیراعظم نوازشریف کوعلاج کیلئے بیرون ملک منتقل کرنے کا امکان مستردکردیا گیا۔

ایکسپریس نیوز کے مطابق نگراں وزیرداخلہ پنجاب شوکت جاوید نے سابق وزیراعظم نوازشریف کی صحت اورعلاج  پر گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ نوازشریف کی صحت بہترہے، فکرمندی کی کوئی بات نہیں، انہیں حفظ ماتقدم کے طورپرذاتی معالج کے کہنے پرلایا گیا تھا، پاکستان میں دل کے امراض کا بہترین علاج کیا جاتا ہے، تمام سہولیات موجود ہے، ایسا کچھ نہیں کہ نوازشریف کا پاکستان میں علاج ممکن نہ ہوسکے۔

اس خبرکوبھی پڑھیں: نوازشریف کی ڈاکٹروں سے واپس جیل جانے کی خواہش

نگراں وزیرداخلہ پنجاب کا کہنا تھا کہ مرض کی ہسٹری کا لندن سے منگوانا یا بھجوانا 5 منٹ کا کام ہے، نوازشریف کے کھانے میں کوئی بد پرہیزی نہیں کی گئی بلکہ ہدایات کے مطابق ان کے گھر سے کھانا آ رہا ہے، بیٹی مریم نواز کی طرف سے والد کی تیمار داری کی کوئی درخواست نہیں کی گئی۔

نگراں وزیرداخلہ پنجاب نے کہا کہ حکومت سازی کے لئے گٹھ جوڑ جمہوری عمل کا حصہ ہے، یہ کوئی اچھنبے کی بات نہیں، آئین کے مطابق 10 اگست تک الیکشن کمیشن نے نوٹی فکیشن جاری کرنا ہیں اور جس کے بعد 24 گھنٹے میں قومی وصوبائی اسمبلیوں کے اجلاس ہوں گے۔

ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔