آنے والے دنوں میں لاک ڈاؤن میں بتدریج نرمی کی جائے گی، وزیراعظم

ویب ڈیسک  پير 4 مئ 2020
لاک ڈاؤن کھولیں گے تو لوگوں کو دوبارہ نوکریاں ملیں گی، وزیراعظم عمران خان

لاک ڈاؤن کھولیں گے تو لوگوں کو دوبارہ نوکریاں ملیں گی، وزیراعظم عمران خان

 اسلام آباد: وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ حکومت نے یہ فیصلہ کیا ہے کہ آنے والے دنوں میں لاک ڈاؤن میں بتدریج نرمی کی جائے گی.

وزیراعظم کی زیرصدارت پی ٹی آئی پارلیمانی پارٹی کا اجلاس ہوا۔ جس میں ملک بھر سے پی ٹی آئی کے ارکان قومی و صوبائی اسمبلی، صوبائی وزرائے اعلی سمیت وفاقی وزراء ویڈیو لنک کے ذریعے شریک ہوئے۔ اجلاس میں کورونا کی صورتحال، حکومتی اقدامات اور مرض سے متعلق خدشات پر تفصیلی بات چیت کی گئی۔ ارکان اسمبلی نے اپنے اپنے حلقوں میں کورونا کی صورتحال پر وزیر اعظم کو بریفنگ دی۔ وزیراعظم نے ٹائیگر فورس کے بارے میں پارٹی اراکین کو گائیڈ لائینز فراہم کرتے ہوئے انہیں اپنے اپنے حلقوں میں ٹائیگرفورس کو متحرک کرنے کی ہدایت کی۔

اجلاس سے خطاب کے دوران وزیراعظم نے کہا کہ حکومت نے یہ فیصلہ کیا ہے کہ آنے والے دنوں میں لاک ڈاؤن میں بتدریج نرمی کی جائے گی، ہرشعبے کے لئے حفاظتی اقدامات پر مبنی جامع ایس اوپیزتیارکیے جا چکے ہیں، حکومت نے مشکل حالات کے باوجود مجموعی طور 1.25 کھرب روپے کے معاشی پیکیج کا اعلان کیا، ملک کے سوا ایک کروڑمستحق خاندانوں کو 12 ہزار روپے میرٹ پر فراہم کیے جارہے ہیں، مزدوروں اور ورکرز کو ریلیف فراہم کرنے کے لئے بھی ایک خصوصی پروگرام کا اجراء کیا گیا ہے۔

وزیراعظم نے کہا کہ منتخب عوامی نمائندگان حکومت کی جانب سے ریلیف پیکیج سے مستحقین کو فائدہ یقینی بنائیں، زندگی کے ہر شعبے سے تعلق رکھنے والے افراد نے ٹائیگر فورس میں شمولیت اختیار کی، دس لاکھ رضاکاروں پرمشتمل کورونا ریلیف ٹائیگر فورس کو برؤے کار لانے کے لئے ٹی او آرز تیار کیے جا چکے ہیں، خدمت کے جذبے سے سرشار یہ ٹائیگرفورس عوام کو ریلیف کی فراہمی میں ضلعی انتظامیہ کی مدد کرے گی، ٹائیگرفورس عوامی مقامات پرحفاظتی اقدامات پرعمل درآمد میں معاونت کرے گی اوریوٹیلیٹی اسٹورز پر اشیائے ضروریہ کے اسٹاک کے بارے میں انتظامیہ کو آگاہ رکھے گی۔

عوامی نمائندوں کے لیے عوام کی خدمت کا بہترین موقع ہے، موجودہ وقت سارے اختلافات بھلا کر قوم کی خدمت کا تقاضا کرتا ہے۔ مجھے معلوم ہے ہر کوئی اپنی استعداد میں کام کررہا ہے، موجودہ صورتحال میں ایک ٹیم بن کرکام کرنا ہوگا، اتحاد اور نظم و ضبط کے ساتھ کورونا وائرس کا کامیابی سے مقابلہ کریں گے۔

وزیراعظم نے کہا کہ پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں کمی کے ثمرات عوام تک ہر صورت پہنچانے ہیں، ارکان اسمبلی اپنے حلقوں میں انتظامیہ کے ساتھ مل کرقیمتوں پرنظررکھیں، ارکان اسمبلی کورونا کے اثرات سے نمٹنے کے لیے نوجوانوں کومتحرک کریں۔ حکومتی گائیڈ لائنزپرعملدرآمد کروانے میں انتظامیہ کے ساتھ مل کرکام کریں۔ ارکان اسمبلی مساجد میں ایس اوپیزپرعملدرآمد کرانے میں بھی کردارادا کریں۔

وزیراعظم نے کہا کہ کورونا وبا قابو میں ہے جلد ہی اس پر مکمل قابو پالیں گے۔ کورونا کی وجہ سے ملکی معیشت کو بہت نقصان ہوا، حکومت ہرطبقے کوریلیف فراہم کرنے کے اقدامات کررہی ہے۔

دوسری جانب ٹائیگر فورس سے خطاب کرتے ہوئے وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ ملک میں بڑے مسئلے لاک ڈاؤن کی وجہ سے ہیں، لاک ڈاؤن کی وجہ سے غریب طبقہ بہت متاثر ہوا، انتظامیہ اکیلے کچھ نہیں کر سکتی، اس لیے رضاکار فورس بنائی، ٹائیگر فورس رضاکارانہ طور پر انتظامیہ کی مدد کرے گی، برطانوی وزیراعظم نے رضاکاروں کیلئے درخواست کی، برطانیہ میں ڈھائی لاکھ افراد نے خود کو رضاکار رجسٹرڈ کرایا۔

وزیراعظم عمران خان کا کہنا تھا کہ ٹائیگر فورس کے نوجوانوں کا شکریہ ادا کرتا ہوں، ہم نے اب آہستہ آہستہ لاک ڈاؤن کو کھولنا ہے اور ٹائیگرفورس کی سب سے بڑی ذمہ داری لوگوں کو آگاہ کرنا ہے، رضاکار لوگوں کو سماجی فاصلے اور دیگر احتیاطی تدابیر سے آگاہ کریں، کورونا پھیلا تو ہمیں پھر لاک ڈاؤن کی طرف جانا پڑے گا، اگر لوگوں نے ہدایات پر عمل نہ کیا تو خطرہ ہے کورونا پھر سے پھیلے گا۔

وزیراعظم نے کہا کہ لوگوں کی نوکریاں چلی گئی ہیں،لوگ مشکل میں پڑ گئے لیکن لاک ڈاؤن کھولیں گے تو لوگوں کو دوبارہ نوکریاں ملیں گی، لاک ڈاؤن کھولنے کیلئے ایس او پیز رکھ رہے ہیں، لوگوں کو کورونا سے بچانا اور روزگار بھی دینا ہے، ٹائیگرفورس بیروزگار افراد کی رجسٹریشن کرائیں، کہیں بھی ذخیرہ اندوزی دیکھیں تو انتظامیہ کو بتائیں۔

ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔