نوازشریف کی شیخوپورہ میں ضبط شدہ جائیدادیں نیلام کرنے کافیصلہ

ویب ڈیسک  منگل 18 مئ 2021
نوازشریف کی ضبط شدہ جائیدادیں نیلام کرنے کا فیصلہ اسلام آباد ہائیکورٹ میں چیلنج فوٹو: فائل

نوازشریف کی ضبط شدہ جائیدادیں نیلام کرنے کا فیصلہ اسلام آباد ہائیکورٹ میں چیلنج فوٹو: فائل

 اسلام آباد: سابق وزیراعظم نواز شریف کی شیخوپورہ میں ضبط شدہ جائیدادیں 20 مئی کو نیلام کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔

ایکسپریس نیوز کے مطابق سابق وزیراعظم نواز شریف کی شیخوپورہ میں ضبط شدہ جائیدادیں نیلام کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے، اس حوالے سے ڈی سی شیخوپورہ نے بولی کی تاریخ 20 مئی مقرر کردی ہے۔

دوسری جانب اسلام آباد ہائی کورٹ میں نواز شریف کی شیخوپورہ اور لاہور میں جائیدادوں کی نیلامی رکوانے کی درخواستیں سماعت کے لئے مقرر کردی گئی ہیں۔ جسسٹس عامر فاروق اور جسٹس طارق محمود جہانگیری سماعت کریں گے۔

درخواست گزار اسلم عزیز کا موقف ہے کہ رائیونڈ کے باغات پر سرمایہ میں نے لگایا نیلامی سے نقصان میرا ہوگا، اشرف ملک نامی درخواست گزار نے اپنی درخواست میں دعویٰ کیا ہے کہ شیخوپورہ کی 88 کنال اراضی نواز شریف سے خرید چکا ہوں، نواز شریف کو 75 ملین روپے کی ادائیگی بھی کی جاچکی ہے تاہم نواز شریف کی گرفتاری کے باعث سیل ڈیڈ پر عمل درآمد نہ ہوسکا، سیل ڈیڈ پر عمل درآمد کے لیے سول کورٹ سے رجوع کررکھا ہے لہذا ڈی سی شیخوپورہ کو زرعی اراضی کی نیلامی سے روکا جائے، اقبال برکت نے موقف اختیار کیا ہے کہ ‏ اپر مال کا گھر اتفاق گروپ کی سیٹلمنٹ میں ہمیں مل چکا ہے۔

ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔