تازہ ترین 
< >
rss

 سعد اللہ جان برق

باہر جانے آنے والے

ہم سوچتے ہیں کہ یہاں خوا مخواہ دکانداروں اور سوداگروں کے ہاتھوں زچ کیا ہوں گے وہاں جائیں گے تو خوب جی بھر کرکھالیں گے۔

February 26, 2020

ہم بھی یک جہتی کریں گے

ایک کرپشن نام کی ملکہ حسن جمع ملکہ پاکستان جمع ملکہ عالم ہوا کرتی تھی وہ بھی نہ جانے کہاں غائب ہوگئی ہے۔

February 22, 2020

توثیق، توسیع اور توفیق

ہم جانتے ہیں کہ پرخاش سے ہم کسی کا کچھ بھی نہیں بگاڑسکتے جو چل رہا ہے وہی چلتا رہے گا، چاہے وہ توسیع ہو یا تشریح۔

February 20, 2020

یادوں کے جنازے

ایک جنازہ تو ہم مستقل اٹھائے ہوئے ہیں جس میں کاندھے بھی ہمارے ہیں، پیربھی ہمارے ہیں، چارپائی بھی ہم خود ہیں۔

February 18, 2020

چور کی تلاش

ہم سمجھتے تھے کہ چلو ہم سے زیادہ ضرورت مند اور مستحق ہوگا ویسے بھی ہمارا بھرا پرا گھر ہے کسی چیز کی کوئی کمی نہیں ہے۔

February 15, 2020

ایک ٹشو پیپر اور

ننگی نہائے گی کیا نچوڑے گی کیا اور سکھائے گی کیا۔ وہ طفل کیا کرے گا جو گھٹنوں کے بل چلے۔

February 13, 2020

کون بنے گا کون؟

کمشیربنے گا پاکستان۔یہ توخیربعد میں پتہ کریں گے کہ بنائے گاکون؟کہ اپنے یہاں بنانے والے بھی بہت ہیں۔

February 11, 2020

می ٹو کے بعد می رقصم

بے خودی میرا سراپا خودی میں اپنے ہی سراپے پر قربان ہوجاتاہے اور میں ’’پرکار‘‘کی طرح اپنے مرکز کے گرد ناچتاہوں۔

February 8, 2020

صرف بارش کا انتظار ہے

بات اگر صرف دیکھنے کی ہوتی تب بھی کچھ ایسا ویسا ہو سکتا تھا، آندھی آ سکتی تھی، طوفان آ سکتا تھا سوکھا آ سکتا تھا۔

February 5, 2020

اپنے لیے۔اور قرض کے لیے

اپنی پیدائش سے لے کر آج تک تقریباً ہر محکمے اور ادارے میں وزیر رہی ہے۔

February 4, 2020
30