پریانکا بھی ڈونلڈ ٹرمپ کے مسلم مخالف فیصلے پربول پڑیں

ویب ڈیسک  اتوار 5 فروری 2017
بچوں کے ساتھ مذہب کی بنیاد پر یہ امتیاز نہیں برتنا چاہیے، پریانکا چوپڑا، فوٹو:فائل

بچوں کے ساتھ مذہب کی بنیاد پر یہ امتیاز نہیں برتنا چاہیے، پریانکا چوپڑا، فوٹو:فائل

ممبئی: بالی ووڈ اداکارہ پریانکا چوپڑا نے امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے 7 مسلم ممالک کے شہریوں کے ملک میں داخلے پر پابندی کے فیصلے کو آڑے ہاتھوں لیا ہے۔

امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے 7 مسلم ممالک کے شہریوں کے ملک میں داخلے کے خلاف امریکا اور برطانیہ سمیت دنیا بھر میں احتجاج کا سلسلہ جاری ہے جب کہ امریکی صدر کے فیصلے پر مختلف طبقات سے تعلق رکھنے والی شخصیات نے بھی کھل کر تنقید کی ہے جس میں ہالی ووڈ اداکار بھی شامل ہیں لیکن اب امریکی فلموں اور ڈراموں میں اداکاری کے جوہر دکھانے والی بالی ووڈ اداکارہ بھی اس فیصلے کے خلاف بول پڑی ہیں۔

اس خبر کو بھی پڑھیں:پریانکا کو اذان سے سکون ملتا ہے

بالی ووڈ اداکارہ اور یونیسیف کی خیرسگالی کی سفیر پریانکا چوپڑا نے سماجی رابطے کی سائٹ لنکڈن پر اپنے فیچر میں لکھا ہے کہ امریکی پابندی کا شکار مسلم ممالک میں یونیسیف کے تحت متعدد پراجیکٹ چل رہے ہیں اور ان ممالک میں جنگ کے باعث کئی ملین بچے مسائل سے دوچار ہیں۔ انہوں نے کہا کہ  بچوں کے ساتھ مذہب کی بنیاد پر یہ امتیاز نہیں برتنا چاہیے اور نہ ہی ہمیں اس پابندی کو برداشت کرنا چاہیئے کیوں کہ اس فیصلے سے مجھ سمیت دنیا کا ہر ایک انسان متاثر ہورہاہے۔

اس خبر کو بھی پڑھیں:ٹرمپ کے مسلم مخالف اقدامات، ایرانی اداکارہ نے آسکر تقریب کا بائیکاٹ کردیا

 

ایکسپریس میڈیا گروپ اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔